ایف او کا کہنا ہے کہ بدقسمتی سے سی این این پر ایف ایم قریشی کے ریمارکس کو دیا گیا موڑ بدقسمتی سے اس کی بات کو ثابت کرتا ہے

دفتر خارجہ کے ترجمان نے جمعہ کو بتایا کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سی این این کو دیئے گئے اپنے انٹرویو میں کوئی یہودی مخالف رائے نہیں دی۔

زاہد حفیظ چودھری نے ٹویٹر پر روشنی ڈالی کہ سی این این انٹرویو "بدقسمتی” سے ایف ایم کے ریمارکس کو دیئے جانے والے کسی بھی موڑ نے قریشی کی بات کو ثابت کردیا۔

انہوں نے کہا کہ ایف ایم کے تبصرے کو کسی بھی طرح کے تخیل کے ذریعہ انسداد سامی سمجھا نہیں جاسکتا۔

ایف او کے ترجمان نے کہا ، "ہر ایک کو اظہار رائے کی آزادی کے حق کے لئے یکساں احترام ہونا چاہئے۔

سی این این کی اینکر بیانا گولودریگا نے یہ تاثر دیا تھا کہ قریشی کے تبصرے "انسداد سامی” تھے۔

ایف ایم نے میڈیا پر قابو پانے اور "گہری جیبیں” رکھنے پر اسرائیل پر حملہ کیا تھا۔

سی این این انٹرویو میں قریشی نے کہا ، "اسرائیل ہار رہا ہے۔” انہوں نے کہا تھا کہ "وہ رابطوں کے باوجود میڈیا کی جنگ ہار رہے ہیں… جوار کا رخ موڑ رہا ہے۔”

پاکستان میں ٹویٹر صارفین نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کے سوشل میڈیا پر آگ لگنے کے بعد اس کی حمایت کا مظاہرہ کیا اور ان کی تعریف کی جس کے اس بیان پر کہ اسرائیلی میڈیا مغربی میڈیا پر سخت اثر و رسوخ کا استعمال کرتا ہے۔

انھیں ‘اینٹی سیمیٹک’ کے نام سے لیبل لگایا جارہا تھا ، لیکن #CNNExpected اور #ShhahmoodQureshi ٹویٹر پر ٹرینڈ ہونے کے ساتھ ہی پاکستانی ٹویٹر اس کے پاس نہیں تھا۔

اسرائیل کی طرف سے غزہ میں دو ہفتوں سے بھی کم عرصے میں قریب 250 فلسطینی مرد ، خواتین اور بچے ہلاک ہوچکے ہیں۔


.

Source link

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے