پاکستان حکومت کا کہنا ہے کہ متوقع ماؤں کو چینی ، روسی کورونا وائرس سے بچنے والی ویکسین سے پرہیز کرنا چاہئے

ملک سرکاری طور پر چینی ویکسین کا استعمال ان لوگوں کو ٹیکہ لگانے کے لئے کر رہا ہے جن کی عمر 50 سال یا اس سے زیادہ ہے۔ فائل فوٹو

اسلام آباد (قدرت روزنامہ) حکومت پاکستان نے متوقع ماؤں سے کہا ہے کہ وہ اس وقت کورونا وائرس سے بچنے کے لئے چینی سونوفرم ، کینسو بائیو ، سونووک ، اور روسی اسپوتنک-وی ویکسینوں سے باز رہیں جو اس وقت مقامی مارکیٹ میں دستیاب ہیں۔

وزارت صحت کے عہدیداروں نے بتایا کہ حاملہ خواتین پر کورونا وائرس ویکسین کے ٹرائل سے ان کے پاس واضح اعداد و شمار موجود نہیں ہیں۔

لہذا ، نتیجہ اخذ کرنے کے لئے ناکافی اعداد و شمار موجود ہیں کہ آیا حاملہ ماؤں کے لئے کورونا وائرس ویکسینیشن محفوظ ہے یا نہیں۔

ملک میں 50 سال یا اس سے زیادہ عمر کے افراد کے ساتھ ساتھ ہیلتھ کیئر ورکرز کو ٹیکے لگانے کے لئے سرکاری طور پر چینی ویکسینیں استعمال کی جارہی ہیں۔ روسی سپوتنک – ویکسین تجارتی طور پر خریداری کے لئے دستیاب ہے۔

محکمہ صحت کے وزیر ڈاکٹر فیصل سلطان کے مطابق ، اب تک ملک میں لگ بھگ 20 لاکھ افراد کو قطرے پلائے جاچکے ہیں۔


.

Source link

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے