کرونا کا قہر ۔ امریکی روحانی خاتون جین ڈکسن کی پیسن گوئیاں اور قیامت صغریٰ

کرونا کا قہر ۔ امریکی روحانی خاتون جین ڈکسن کی پیسن گوئیاں اور قیامت صغریٰ

امریکہ کی مشہور و معروف خاتون جین ڈکسن محتاج تعارف نہیں ۔ وہ دوسری عالمگیر جنگ سے چند سال قبل جرمنی کے ایک گاؤں میں پیدا ہوئیں ۔ بچپن میں ان کے والدین نقل مکانی کرکے مستقل طور پر کیلی فورنیا میں آباد ہوگئے

 خالق کائنات نے انہیں مستقبل کی پیشن گوئیاں کرنے کی الہامی صلاحیت عطا فرمائی ۔ جین ڈکسن کی پیشن گوئیاں پوری دنیا میں مشہور ہیں ۔ اس موضوع پر مختلف کتابیں  مختلف زبانوں میں موجود ہیں ۔ چنانچہ اردو زبان میں بھی ایک کتاب بنام جین ڈکسن  کی پیشن گوئی  ۔420 مال روڈ لاہور سے 1970میں شائع ہو چکی ہے ۔ جین ڈکسن اپنے مراقبہ کی خداداد صلاحیتوں کے ذریعے ارشاد فرماتی ہیں ۔ مجھے اپنے واجدانی علم سے نظر آرھا ہے ۔

1: دنیا میں اسلحہ کی دوڑ تیز ہوجائے گی

2: امریکہ کو انتہائی خرابیوں سے دوچار ہونا پڑئے گا

3: چین مستقبل میں جراثیمی جنگ چھیڑے گا

4:تیسری عالمگیر جنگ شروع ہوگی جس کا سلسلہ بیس سال جاری رہے گا

5: امریکہ کو چین سے لڑنا پڑے گا ۔ اور امریکہ بے حد تباہ ہوئے گا

چینی اور منگول افواج مشرق وسطی پر مسلسل حملے کر رہی ہیں ۔ یہ مشرق اور  مغرب کے خلاف شدید جنگ ہوگی

     مجھے یہ بھی نظر آرھا ہے کہ  نیو یارک کے سیاسی مشینری امریکہ میں بے پناہ مذھبی و معاشرتی طواف الملوکی پیدا کرکے ایک آنے والے دجال کے لیے زمین تیار کررہی ہے ۔

 جس کا ظہور قریب ہے  یہ دجال پورے عالم کا علمی اغوا کرکے سیاسی ، مذھبی ، فلسفیانہ نظریات کا ایک انتہائی پرکشش ملغوبہ   تیار کرکے  کرہ ارض کی مختلف آبادیوں کے ایمان باللہ والےافراد کو اذیت ناک اور شدید بحران کے بھنور میں ڈالدے گا ۔ اس کے اثرات عالمی  پیمانے پر ہونگے اور یہ عالمی حکومت کا پیرو ہوگا ۔ جس کو امریکہ اور دنیا کی کرپٹ حکومتیں خوش آمدید کہیں گی ۔

                                      موجودہ نسل کا حشر

مجھ پر انکشاف ہوا ہے کہ موجودہ نسل کے جنھوں نے روحانی اقدار سے مکمل انحراف کا راستہ اختیار کیا ہے ۔ وہ نوجوان ایسی بے شمار تکالیف اور اذیت ناک مصائب برداشت کریں گے  جو نادیدہ  ناشیدہ ہونگے ۔ موجودہ نسل جو زہریلی فصل اپنے افعال سے تیار کررہی ہے ۔ اس کےتیار شدہ کھیت وہ خود کاٹے گی ۔

  میں یہ بھی دیکھ رہی ہوں کہ آنے والے سالوں میں دنیا میں روحانیت کا تذکرہ بہت زیادہ ہو جائے گا ۔

لیکن اس سے قبل ہم ایک جراثیمی جنگ سے دوچار ہو نگے ۔ جو انتہائی مہنگی اور خوفناک قسم  کی جنگ ہو گی ۔ اس میں  انسانی جانوں ، جانوروں اور فصلوں کی تباہی بربادی کا اندازہ لگانا ہی مشکل ہے ۔

ان کل مصائب و تکالیف کا اختتام آنیوالے روحانی پیشوا کی آمد پر ہوگا ۔ جو دنیا میں انسانیت کا مطلوبہ انقلاب برپا کرئے گا ۔ اور دنیا کے مختلف مذاہب اس کے ہاتھ پر ایک دین واحد اور دین غالب بن جائیں گے ۔ دنیا کو اس روحانی پیشوا کی بے پناہ قوتوں کا احساس ہو گا ۔ پھر اس کا بول بالا ہوتا رہے گا ۔

وہ کرہ ارض کا فرماں روا بن جائے گا۔ اس وقت تک دنیا میں ایک عظیم روحانی انقلاب آچکا ہوگا ۔ روئے زمین کی کوئی طاقت اس کے سامنے دم نہ مار سکے گی ۔ اس کی حکمت اور حکومت عالمگیر ہوگی ۔ دنیا کو جس امن کی تلاش ہے وہ قائم ہو جائے گا  ۔

نوٹ : اس پوسٹ کو زیادہ سے زیادہ شیئر کریں ۔شکریہ

Summary
کرونا کا قہر ۔ امریکی روحانی خاتون جین ڈکسن کی پیسن گوئیاں اور قیامت صغریٰ
Article Name
کرونا کا قہر ۔ امریکی روحانی خاتون جین ڈکسن کی پیسن گوئیاں اور قیامت صغریٰ
Description
امریکہ کی مشہور و معروف خاتون جین ڈکسن محتاج تعارف نہیں ۔ وہ دوسری عالمگیر جنگ سے چند سال قبل جرمنی کے ایک گاؤں میں پیدا ہوئیں ۔ بچپن میں ان
Author
Publisher Name
Jaun News
Publisher Logo

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے